ملک میں مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کے لیے علمائے کرام ضابطہ اخلاق پر متفق - Roznama Punjab

تازہ ترین

Home Top Ad

Post Top Ad

Your Ads Here

منگل، 6 اکتوبر، 2020

ملک میں مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کے لیے علمائے کرام ضابطہ اخلاق پر متفق


ملک میں مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کے لیے علمائے کرام ضابطہ اخلاق پر متفق

فرقہ ورانہ نفرت اور پاکستان کی اسلامی شناخت کے منافی کوئی پروگرام نشر نہ کیا جائے،ہر فرد غیرت کے نام پر قتل،قرآن پاک سے شادی،ونی،کاروکاری اور وٹہ سٹہ سے باز رہے۔ ضابطہ اخلاق


اسلام آباد (روزنامہ پنجاب تازہ ترین اخبار۔6 اکتوبر2020ء) ملک میں مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کے لیے علمائے کرام ضابطہ اخلاق پر متفق ہو گئے۔تفصیلات کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل میں پیغا، کانفرنس ہوئی۔ملک بھر کے تمام مکاتب فکر کے جید علمائے کرام نے کانفرنس میں شرکت کی۔کانفرنس میں فرقہ ورانہ ہم آہنگی کے فروغ کے لیے 20نکاتی ضابطہ اخلاق کی منظوری دی گئی ہے۔

کانفرنس میں وزیر مذہبی امور نور الحق قادری،مفتی تقی عثمانی،مفتی منیب الرحمان نے شرکت کی۔کانفرنس میں علامہ ساجد میر، حنیف جالندھری اور قبلہ ایاز کی بھی شرکت کی۔اس کے علاوہ فقیر محمد نقیب الرحمان،عارف واحدی، سید ضیااللہ بخاری کی بھی کانفرنس شرکت کی۔ضابطہ اخلاق کے مطابق پاکستان میں تمام شہری ریاست کے ساتھ اپنی وفاداری کے حلف کو نبھائیں۔

(جاری ہے)




آزادی اظہار اسلام اور ملکی قونین کے ماتحت ہے۔فرقہ ورانہ نفرت اور پاکستان کی اسلامی شناخت کے منافی کوئی پروگرام نشر نہ کیا جائے۔کوئی شخص موضوعات سے متعلق ٹی وی،اخبارات اور سوشل میڈیا پر متنازع گفتگو نہیں کی جائے گی۔اسلام خواتین کے حقوق کا تحفظ کرتا ہے۔ان کی تعلیم، روزگار اور ووٹ کے حق کا تحفظ کیا جائے گا۔ہر فرد غیرت کے نام پر قتل،قرآن پاک سے شادی،ونی،کاروکاری اور وٹہ سٹہ سے باز رہے۔ضابطہ اخلاق میں مزید کہا گیا ہے کہ غیر مسلم پاکستانیوں کا حق ہے کہ وہ اپنی مذہبی رسومات اپنے عقائد کے مطابق ادا کریں۔ 

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Bottom Ad

YOUR AD HERE