ایک گاڑی والے نے دیکھا خاتون کو زبردستی گاڑی سے اتار جا رہا ہے - Roznama Punjab

تازہ ترین

Home Top Ad

Post Top Ad

Your Ads Here

جمعرات، 10 ستمبر، 2020

ایک گاڑی والے نے دیکھا خاتون کو زبردستی گاڑی سے اتار جا رہا ہے

ایک گاڑی والے نے دیکھا خاتون کو زبردستی گاڑی سے اتار جا رہا ہے

پٹرول ختم ہوا تو خاتون نے 15 کی بجائے بھائی کو اطلاع دی،جلد معاملے کی تہہ تک جائیں گے۔ 48 گھنٹوں میں ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا۔ سی سی پی او لاہور عمر شیخ کی گفتگو



لاہور(روزنامہ پنجاب اخبار تازہ ترین۔ 10 ستمبر 2020ء) گذشتہ روز ڈاکوؤں نے موٹروے پر خاتون کو بچوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے واقعے کا نوٹس لے لیا جب کہ اس حوالے سے سی سی پی او لاہور کا کہنا ہے کہ خاتون کی گاڑی میں رات کو ایک بجے پٹرول ختم ہوا،خاتون نے 15 پر اطلاع دینے کی بجائے بھائی کو کال کی۔

پولیس کو 3 بج کر 5منٹ پر واقعے کی اطلاع ملی۔ایک گاڑی والے نے دیکھا خاتون کو زبردستی گاڑی سے اتار جا رہا ہے،ایس ایس پی انوسٹیگیشن واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔جلد معاملے کی تہہ تک جائیں گے۔ 48 گھنٹوں میں ملزمان تک پہنچ جائیں گے۔14 افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب ملزمان نے خاتون کی گاڑی کا شیشہ توڑا تو انہیں زخم آیا،وہاں سے بلڈ سیمپل بھی لے لیا گیا ہے۔

(جاری ہے)


جب کہ وزیر اعظم کے معاون خصوصی شہباز گل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر جاری ایک پیغام میں بتایا ہے کہ اجتماعی زیادتی کے واقعہ میں ملوث 12 کے قریب مشتبہ افراد کو دھر لیا گیا ہے۔ اپنے ٹوئیٹ میں انہوں نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر سی سی او پی لاہور تفتیشی ٹیم کی سربراہی کر رہے ہیں۔ شہباز گل کے مطابق تفتیش میں اربن اور رورل پولیسنگ کی تکنیک استعمال کی جا رہی ہے- معاون خصوصی نے بتایا کہ پولیس نے اب تک 12 کے قریب مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ کھوجی، سی سی ٹی وی فوٹیج اور ڈی این اے کی مدد سے تفتیش کا عمل جاری ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز لاہور کے علاقے گجرپورہ کے قریب ایک خاتون کو اس کے بچوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا تھا۔ کہ لاہور سے گوجرانوالہ جاتے ہوئے موٹروے پر دوران سفر خاتون کی گاڑی خراب ہو گئی تھی، اس دوران چند نامعلوم افراد اچانک نمودار ہوئے اور سڑک پر کھڑی گاڑی کا شیشہ توڑ ڈالا۔ گاڑی میں خاتون اور اس کے بچے موجود تھے۔ ملزمان نے خاتون اور بچوں کو گاڑی سے نکالا اور موٹروے کی حفاظتی تار کاٹ کر انہیں قریبی جھاڑیوں میں لے گئے جہاں زیادتی کا نشانہ بنایا۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Bottom Ad

YOUR AD HERE