نشانِ حیدر پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز - Roznama Punjab

تازہ ترین

Home Top Ad

Post Top Ad

Your Ads Here

بدھ، 9 ستمبر، 2020

نشانِ حیدر پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز

#نشانِ_حیدر

 پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز ہے۔



راولپنڈی (روزنامہ پنجاب اخبارتازہ ترین 8 ستمبر 2020)جو دوران جنگ دشمن سے قبضے میں لیے جانے والے اسلحے کو پگھلا کر تیار کیا جاتا اور اس میں 20 فیصد سونے کا بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

اور نشانِ حیدر اب تک پاک فوج کے دس جوانوں کو مل چکا ہے۔ پاکستان کی فضائیہ کی تاریخ اور پاکستان کی بری فوج کے مطابق نشانِ حیدر حضرت علی کے نام پر دیا جاتا ہے کیونکہ ان کا لقب حیدر کرار تھا

 اور ان کی بہادری ضرب المثل ہے۔ یہ نشان صرف ان لوگوں کو دیا جاتا ہے، جو وطن کے لیے انتہائی بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے شہید ہو چکے ہوں۔ 

ان میں میجر طفیل نے سب سے بڑی عمر یعنی 44 سال میں شہادت پانے کے بعد نشان حیدر حاصل کیا، باقی فوجی جنہوں نے نشان حیدر حاصل کیا ان کی عمریں 40 سال سے بھی کم تھیں 

جبکہ سب سے کم عمر نشان حیدر پانے والے راشد منہاس تھے جنہوں نے اپنی تربیت میں 20 سال 6 ماہ کی عمر میں شہادت پر نشان حیدر اپنے نام کیا۔ آج تک پاکستان میں صرف دس افراد کو نشانِ حیدر دیا گیا ہے ۔

#1 کپٹن راجہ محمد سرور ، 1/2 پنجاب رجمنٹ پاک فوج، پاک بھارت جنگ .

#2 میجر طفیل محمد ، سولہویں پنجاب رجمنٹ مشرقی پاکستان رائفل پاک فوج، پاک بھارت جنگ 1965.

#3 میجر راجہ عزیز بھٹی ، 17 پنجاب رجمنٹ پاک فوج ، پاک بھارت جنگ 1965.

#4 پائلٹ آفیسر راشد منہاس ، نمبر- 2 فائٹر کنورژن یونٹ پاک فضائیہ ، 20 اگست 1971۔

#5 میجر شبیر شریف ، 6 فرنٹیئر فورس رجمنٹ پاک فوج ، پاک بھارت جنگ 1971.

#6 سپاہی ، سولجر سوار محمد حسین ، 20 لانسرز (آرمرڈ کور) پاک فوج ، پاک بھارت جنگ 1971.

#7 میجر محمد اکرم ، 4 فرنٹئیر فورس رجمنٹ پاک فوج ، پاک بھارت جنگ 1971.

#8 لانس نائیک محمد محفوظ ، 15 پنجاب رجمنٹ پاک فوج ، پاک بھارت جنگ 1971.

#9 کیپٹن کرنل شیر خان ، سندھ رجمنٹ/12 ناردرن لائٹ انفنٹری پاک فوج ، پاک بھارت کارگل جنگ۔

#10 حوالدار لالک جان ، 12 ناردرن لائٹ انفنٹری پاک فوج ، پاک بھارت کارگل جنگ۔ 

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

Post Bottom Ad

YOUR AD HERE